قربانی کے بعض احکام ومسائل

مضمون: قربانی کے بعض احکام ومسائل (صفحات: 9)
تحریر: حافظ زبیر علی زئی رحمہ اللہ
شائع ہوا: ماہنامہ اشاعۃ الحدیث شمارہ 122 صفحہ نمبر 17
مکمل مضمون آن لائن پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں۔

ishaatulhadith

  • مکمل مضمون آن لائن پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں۔
  • قربانی سنت ہے واجب نہیں۔
  • قابل استطاعت آدمی جان بوجھ کر قربانی نہ کرے تو نبی کریم نے فرمایا: ایسا شخص ہماری عیدگاہ کے قریب بھی نہ آئے۔
  • کانے، لنگڑے، واضح بیمار، بہت زیادہ کمزور، سینگ (ٹوٹے یا) کٹے، اور کان کٹے جانوروں کی قربانی جائز نہیں۔
  • قربانی کی کھالیں، گوشت اور جھولیں لوگوں میں تقسیم کریں۔ قصائی کو بطور اجرت نہ دیں۔
  • قربانی اور عقیقہ کے جانوروں (کے گوشت) کو بیچنا جائز نہیں۔
  • صدقے کے طور پر میت کی طرف سے قربانی جائز ہے۔ اس صورت میں قربانی کا تمام گوشت اور کھال مساکین کو صدقے میں دینا ضروری ہے۔
  • عام قربانی کی کھال (یا گوشت) خود (خاندان | گھر) والے استعمال کر سکتے ہیں۔
  • عام قربانی کا گوشت خود کھانا، دوستوں اور رشتہ داروں کو کھلانا اور غریبوں کو تحفتا دینا تینوں طرح جائز ہے۔
  • قربانی کے جانور کو ذبح کرتے وقت اس کا چہرہ قبلہ رخ ہونا چا ہیے۔

مکمل مضمون آن لائن پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں۔

ماہنامہ اشاعۃ الحدیث کی مکمل لسٹ یہاں پر دیکھیں۔

Advertisements