باجماعت نماز 25 گنا افضل ہے

رسول اللہ ﷺ نے فرمایا:

جماعت والی نماز تمھارے اکیلے کی نماز سے پچیس (۲۵) درجے افضل ہے۔

موطا روایۃ ابن القاسم: ۱۱، وأخرجہ مسلم(۶۴۹) من حدیث مالک بہ ورواہ البخاری (۶۴۸) من حدیث الزہری عن سعید بن المسیب وأبی سلمۃ عن أبی ہریرۃ بہ نحوالمعنیٰ مطولاً.

بعض روایات میں ستائیس (۲۷) درجے زیادہ ثواب کا ذکر ہے۔ ان روایات میں کوئی تعارض نہیں بلکہ ہر شخص کو اس کی نیت، خلوص، اتباعِ سنت اور بہترین عمل کے مطابق اجر ملے گا۔ ان شاء اللہ

صحیح العقیدہ مسلمانوں کی نماز باجماعت میں لوگوں کی جتنی اکثریت ہو اتنی افضل ہے۔

رسول اللہ ﷺ نے فرمایا:

((وَصَلاَتُہُ مَعَ الرَّجُلَیْنِ أَزْکٰی مِنْ صَلاَتِہِ مَعَ الرَّجُلِ وَمَا کَثُرَ فَھُوَ أَحَبُّ إِلَی اللہِ))

اور آدمی کی دو آدمیوں کے ساتھ نماز ایک آدمی کے ساتھ نماز سے بہتر ہے اور جتنی کثرت ہو تو وہ اللہ کے ہاں زیادہ محبوب ہے۔

(مسند احمد ۵/ ۱۴۰، وسندہ حسن، سنن ابی داود: ۵۵۴ و صححہ ابن خزیمہ: ۱۴۷۷، وابن حبان، الموارد: ۴۲۹ وللحدیث لون آخر عند ابن ماجہ: ۷۹۰ وغیرہ وسندہ حسن)

fbshare

 

جواب دیں

Please log in using one of these methods to post your comment:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s