سیدنا ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ فاتحہ خلف الامام کے قائل تھے

الاتحاف الباسم فی تحقیق موطأ الإمام مالک روایۃ عبدالرحمٰن بن القاسم حدیث: 139

(سیدنا) ابو ہریرہ (رضی اللہ عنہ) سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا:

جس نے ایسی نماز پڑھی جس میں سورۂ فاتحہ نہ پڑھی تو یہ نماز ناقص ہے۔ ناقص ہے، ناقص ہے، مکمل نہیں ہے۔

(راوی نے کہا) میں نے کہا: اے ابو ہریرہ! میں بعض اوقات امام کے پیچھے ہوتا ہوں؟

تو انھوں (سیدنا ابوہریرہ رضی اللہ عنہ) نے میرا ہاتھ جھٹکا پھر فرمایا:

اے فارسی! اسے اپنے دل میں پڑھ کیونکہ میں نے رسول اللہ ﷺکو فرماتے ہوئے سنا ہے کہ اللہ نے فرمایا:

میں نے اپنے اور اپنے بندے کے درمیان نماز آدھوں آدھ تقسیم کر دی ہے پس آدھی میرے لئے ہے اور آدھی میرے بندے کے لئے ہے اور بندہ جو مانگے گا اسے ملے گا۔

رسول اللہ ﷺ نے فرمایا: بندہ ﴿اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ رَبِّ الْعَالَمِیْنَ﴾کہتا ہے (تو) اللہ فرماتا ہے: میرے بندے نے میری حمد بیان کی۔

بندہ ﴿الرَّحْمٰنِ الرَّحِیْمِ﴾ کہتا ہے (تو) اللہ تعالیٰ فرماتا ہے: میرے بندے نے میری ثنا بیان کی۔

بندہ ﴿مَالِکِ یَوْمِ الدِّیْنِ﴾کہتا ہے (تو) اللہ تعالیٰ فرماتا ہے: میرے بندے نے میری تمجید (بزرگی) بیان کی۔

بندہ کہتا ہے: ﴿اِیَّاکَ نَعْبُدُ وَاِیَّاکَ نَسْتَعِیْنُ﴾ تو یہ میرے اور میرے بندے کے درمیان ہے اور بندہ جو مانگے گا اُسے ملے گا۔

بندہ کہتا ہے: ﴿اِھْدِنَا الصِّرَاطَ الْمُسْتَقِیْمَ صِرَاطَ الَّذِیْنَ أَنْعَمْتَ عَلَیْھِمْ غَیْرِ الْمَغْضُوْبِ عَلَیْھِمْ وَلاَ الضَّآ لِّیْنَ﴾ تو یہ بندے کے لئے ہے اور بندہ جو مانگے گا اسے ملے گا۔ إلخ

تحقیق: سندہ صحیح

تخریج: مسلم

الموطأ (روایۃ یحییٰ ۱/ ۸۴، ۸۵ ح ۱۸۵، ک ۳ ب ۹ح ۳۹) التمہید ۲۰/ ۱۸۷، الاستذکار:۱۶۱

٭ وأخرجہ مسلم ( ۳۹/ ۳۹۵)من حدیث مالک بہ۔

تفقہ:

1. اس حدیث سے معلوم ہوا کہ سیدنا ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ فاتحہ خلف الامام کے قائل تھے۔

ایک روایت میں آیا ہے کہ شاگرد نے سیدنا ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے پوچھا: میں امام کی قراء ت سن رہا ہوتا ہوں؟ تو انھوں نے فرمایا: اے فارسی! اپنے دل میں پڑھ۔ (مسند ابی عوانہ ۲/ ۱۲۸، وسندہ صحیح)

اس کی تشریح میں ملا علی قاری حنفی لکھتے ہیں: آہستہ پڑھ، بلند آواز سے نہ پڑھ ۔ (مرقاۃ المفاتیح۲/ ۵۴۹ ح ۸۲۳)

اس پر اجماع ہے کہ اس حدیث میں پڑھنے سے مراد سراً بغیر جہر کے پڑھنا ہے۔ دیکھئے کتاب القراء ت للبیہقی (ص ۳۱)

شاہ ولی اللہ دہلوی حنفی نے کہا: ’’یعنی آہستہ بخوان تاغیر تو آنرا نشنود‘‘ یعنی آہستہ پڑھ تاکہ تیرے سوا دوسرا کوئی اسے نہ سنے۔ (مسوی مصفی شرح موطأ ج۱ص ۱۰۶)

معلوم ہوا کہ جو لوگ اس سے ہونٹ ہلانے کے بغیر صرف اخبار پڑھنے والا تدبر مراد لیتے ہیں غلط ہے۔

سیدنا ابو ہریرہرضی اللہ عنہ نے اپنے شاگرد سے فرمایا: جب امام سورۂ فاتحہ پڑھے تو تُو اسے پڑھ اور امام سے پہلے ختم کرلے۔ (جزء القراء ۃ للبخاری:۲۳۷ وسندہ صحیح وقال النیموی التقلیدی فی آثار السنن:۳۵۸ ’’و إسنادہ حسن‘‘)

معلوم ہوا کہ پڑھنے سے مراد صرف تدبر نہیں بلکہ ہونٹوں سے خفیہ آواز کے ساتھ پڑھنا ہے ورنہ امام سے پہلے ختم کرنے کا کیا مطلب ہے؟

سیدنا ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ کے علاوہ درج ذیل صحابہ و تابعین بھی فاتحہ خلف الامام کے قائل و فاعل تھے:

1: سیدنا عمر رضی اللہ عنہ (جزء القراء ۃ للبخاری:۵۱ وھو صحیح)

2: سیدنا ابو سعید الخدری رضی اللہ عنہ (جزء القراء ۃ:۱۱، ۱۰۵، وسندہ حسن)

3: سیدنا عبادہ بن الصامت رضی اللہ عنہ (مصنف ابن ابی شیبہ ۱/ ۳۷۵ ح ۳۷۷۰ وسندہ صحیح)

4: سیدنا ابن عباس رضی اللہ عنہ (مصنف ابن ابی شیبہ ۱/ ۳۷۵ ح ۳۷۷۳وھو صحیح)

5: سیدنا انس رضی اللہ عنہ (کتاب القراء ۃ للبیہقی:۲۳۱ وسندہ حسن)

6: سعید بن جبیر رحمہ اللہ ( کتاب القرا ء ۃ للبیہقی:۲۳۷ وسندہ حسن)

7: حسن بصری رحمہ اللہ (السنن الکبریٰ للبیہقی ۲/ ۱۷۱، وسندہ صحیح)

8: عامر الشعبی رحمہ اللہ (مصنف ابن ابی شیبہ ۱/ ۳۷۴ ح ۳۷۶۴ وسندہ صحیح)

9: ابو الملیح اسامہ بن عمیر رحمہ اللہ (مصنف ابن ابی شیبہ ۱/ ۳۷۴ ح ۷۶۸ ۳ وسندہ صحیح)

10:حکم بن عتیبہ رحمہ اللہ (مصنف ابن ابی شبہ ۱/ ۳۷۴ ح ۳۷۶۶ وسندہ صحیح)

امام شافعی، امام اوزاعی اور امام بخاری وغیرہم رحمہم اللہ فاتحہ خلف الامام کے قائل و فاعل تھے لہٰذا اسے منسوخ یا قرآن کے خلاف قرار دینا غلط ہے۔ تفصیل کے لئے دیکھئے میری کتاب ’’الکواکب الدریہ فی وجوب الفاتحہ خلف الامام فی الجہریہ‘‘ اور ’’نصرالباری فی تحقیق جزء القراء ۃ للبخاری‘‘۔

2. حدیث بھی وحی ہے۔

3. نماز کی اصل سورۂ فاتحہ ہے یعنی اس کے بغیر نماز نماز نہیں ہے۔

4. حمدو ثنا سے مراد سورۂ فاتحہ ہے۔ وغیر ذلک من الفوائد

تفصیل کے لئے دیکھئے مضمون ’’امام کے پیچھے سورہ فاتحہ پڑھنے کا حکم‘‘ ماہنامہ الحدیث شمارہ 89 صفحہ 22 تا 29۔

 

جواب دیں

Please log in using one of these methods to post your comment:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s