جہنم سانس باہر نکالتی ہے تو گرمی زیادہ ہو جاتی ہے

 

 

ماہنامہ اشاعۃ الحدیث شمارہ 16 کے توضیح الاحکام میں شیخ رحمہ اللہ سے سوال کیا گیا کہ:

کیا یہ حدیث صحیح ہے کہ:
چھ ماہ کے بعد جہنم سانس باہر نکالتی ہے تو گرمی زیادہ ہو جاتی ہے؟

شیخ رحمہ اللہ کا جواب (جو کہ شائع ہوا: ماہنامہ الحدیث شمارہ 16 صفحہ نمبر 25 تا 26):

جس حدیث میں آیا ہے کہ جہنم سانس باہر نکالتی ہے تو گرمی زیادہ ہو جاتی ہے بالکل صحیح حدیث ہے۔

اسے امام بخاری (۵۳۷) امام مسلم(۶۱۷) امام مالک(المؤطا ۱/۱۶ح۲۷)امام شافعی ( کتاب الأم ص۵۸ ح۱۱۳) اور امام احمد بن حنبل (المسند۲/۲۳۸ ح۷۲۴۶) وغیرہم نے متعدد سندوں کے ساتھ سیدنا ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت کیا ہے۔

اس کے شواہد صحیفہ ہمام بن منبہ (ح ۱۰۸) وغیرہ میں بھی موجود ہیں۔

گرمی کی شدت کا جہنم میں سے ہونا دیگر صحابہ کرام مثلاً سیدنا ابو سعید الخدری رضی اللہ عنہ (صحیح البخاری:۵۳۸) سیدنا ابو ذر رضی اللہ عنہ (صحیح بخاری:۵۳۵ وصحیح مسلم:۶۱۶) اور سیدنا ابو موسی الاشعری رضی اللہ عنہ (السنن الکبر ی للنسائی ۱/۴۶۵ ح ۱۴۹۰) وغیرہم سے مروی ہے ۔

بعض علماء یہ کہتے ہیں کہ یہ حدیث مجاز پر محمول ہے اور بعض علماء کہتے ہیں کہ یہ حدیث حقیقت پر محمول ہے ۔

حافظ ابن عبدالبر رحمہ اللہ (متوفی۴۶۵ھ) لکھتے ہیں کہ:

irshaaad

یعنی یہ دونوں اقوال واضح مفہوم رکھتے ہیں جن پر بحث طوالت کا باعث ہے اور اللہ حق (ماننے) کی توفیق دینے والاہے۔ (التمہید ج ۱۹ ص ۱۱۷)

اگر اس حدیث کا حقیقی معنی مراد لیا جائے تو زمین پر شدیدگرمی ( جہنم کی ) آگ کے تنفس کی وجہ سے ہوتی ہے جس کی کیفیت کا علم اللہ ہی کو ہے ۔ باقی رہے وہ علاقے جہاں اس دوران بھی سردی ہوتی ہے تو یہ استثنائی صورتیں اورموانع موجودہیں ۔مثلاً سخت گرمی کے دوران جب بارش ہو جائے تو موسم ٹھنڈا ہو جاتا ہے اسی طرح اونچے پہاڑ ،گھنے درخت اور برف ان موانع میں سے ہیں جن کی وجہ سے گرمی کی شدت کم ہو جاتی ہے ۔ استثنائی صورتوں کی وجہ سے اصول نہیں بدلتے ۔مثلاً ارشادِ باری تعالیٰ ہے کہ:

irshaaad

بے شک ہم نے انسان کو ملے جلے نطفے سے پیدا کیا، ہم اسے آزمانا چاہتے ہیں ۔ پس ہم نے اسے سننے والا (اور) دیکھنے والا بنایا ہے۔ ( سورۃ الدھر:۲)

حالانکہ بہت سے لوگ بہرے یا اندھے بھی پیدا ہوتے ہیں اور ساری زندگی بہرے یا اندھے ہی رہتے ہیں ۔

جس طرح اس آیت کریمہ میں تخصیص اور استثنائی صورت موجود ہے ، اسی طرح آگ کے سانس والی حدیث میں استثناء اور تخصیص موجود ہے ۔ واللہ اعلم

اس مضمون کو ماہنامہ الحدیث میں پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں۔

Advertisements

خطبہ جمعہ کے وقت دو رکعتیں پڑھنا؟

ماہنامہ اشاعۃ الحدیث شمارہ 16 کے توضیح الاحکام میں شیخ رحمہ اللہ سے سوال کیا گیا:

اصحابِ رسول جب بھی خطبہ جمعہ کے وقت مسجد میں آتے تھے توکیا دو رکعت پڑھ کر بیٹھتے تھے؟

شیخ صاحب کا جواب (جو کہ شائع ہوا: ماہنامہ الحدیث 16 صفحہ نمبر 24):

سیدنا جابر رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم خطبہ دے رہے تھے کہ ایک آدمی مسجد میں داخل ہوا۔ آپ نے فرمایا: کیا تو نے نماز پڑھی ہے؟ اس نے کہا: نہیں، آپ (صلی اللہ علیہ وسلم) نے فرمایا: پس دو رکعتیں پڑھو۔

سیدنا جابربن عبد اللہ الانصاری رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے خطبے میں فرمایا: اگر تم میں سے کوئی شخص جمعہ کے دن (جمعہ پڑھنے کے لئے) آئے اور امام (خطبے کے لئے) نکل چکا ہو تو وہ شخص دو رکعتیں پڑھے۔

سیدنا ابو سعید الخدری رضی اللہ عنہ جمعہ کے دن آئے، مروان (بن الحکم) خطبہ دے رہا تھا۔ آپ نے چوکیداروں کی مخالفت کے باوجود نماز پڑھی۔

معلوم ہوا کہ صحابہ کرام خطبہ جمعہ کے وقت دو رکعتیں پڑھ کر بیٹھتے تھے۔ کسی ایک صحیح روایت سے بھی یہ ثابت نہیں کہ خطبہ جمعہ کے وقت کوئی صحابی مسجد میں آیا ہو اور دو رکعتیں پڑھے بغیر بیٹھ گیا ہو۔

حوالہ کے لئے دیکھیں: http://ishaatulhadith.com/ishaatul-hadith/pdf/16/#24

محرم کے مسائل

مضمون: محرم کے مسائل
تحریر: حافظ زبیر علی زئی رحمہ اللہ
شائع ہوا: ماہنامہ الحدیث شمارہ 21 صفحہ نمبر 6

  1. بعض لوگوں میں یہ مشہور ہے کہ ’’محرم میں شادی نہیں کرنی چاہیے‘‘ اس بات کی شریعتِ اسلامیہ میں کوئی اصل نہیں ہے.
  2. خاص طور پر محرم ہی کے مہینے میں قبرستان پر جانا اور قبروں کی زیارت کتاب و سنت سے ثابت نہیں ہے ، یاد رہے کہ آخرت و موت کی یاد اور اموات کے لیے دعا کے لیے ہر وقت بغیر کسی تخصیص کے قبروں کی زیارت کرنا جائز ہے بشرطیکہ شرکیہ اور بدعتی امور سے مکمل اجتناب کیا جائے ۔
  3. عاشوراء ( 10 محرم ) کے روزے کے بارے میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: میں سمجھتا ہوں کہ عاشوراء کے روزے کی وجہ سے اللہ تعالیٰ گزشتہ سال کے گناہ معاف فرما دیتا ہے ۔
    ایک دوسری روایت میں آیا ہے کہ رمضان کے بعد سب سے بہترین روزے ، اللہ کے ( حرام کردہ ) مہینے محرم کے روزے ہیں ۔
    سیدنا عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہما فرماتے ہیں کہ: یہودیوں کی مخالفت کرو اور نو ( محرم) کا روزہ رکھو۔
  4. محرم حرام کے مہینوں میں سے ہے ۔اس میں جنگ وقتال کرنا حرام ہے الا یہ کہ مسلمانوں پر کافر حملہ کر دیں ۔ حملے کی صورت میں مسلمان اپنا پورا دفاع کریں گے ۔
  5. محرم 6ھ میں غزوہ خیبر ہوا تھا۔
  6. دس محرم 61ھ کو سیدنا حسین رضی اللہ عنہ کربلاء میں مظلومانہ شہید کئے گئے ۔ ان کی شہادت پر شور مچا کر رونا ، گریبان پھاڑنا اور منہ وغیرہ پیٹنا یہ سب حرام کا م ہیں ۔ اسی طرح ’’ امام زادے‘‘ وغیرہ کہہ کر افسوس کی مختلف رسومات انجام دینا اور سبیلیں وغیرہ لگانا شریعت سے ثابت نہیں ہے ۔

حوالہ کے لئے دیکھئے: http://ishaatulhadith.com/ishaatul-hadith/pdf/21/#6

صحیح اور ضعیف احادیث کی پہچان

مضمون: صحیح اور ضعیف احادیث کی پہچان
تحریر: حافظ زبیر علی زئی رحمہ اللہ

صحیح حدیث وہ حدیث ہوتی ہے جو باسند ہو، عادل ضابط عن عادل ضابط آخر تک متصل ہو، شاذ اور معلول نہ ہو۔اس حدیث کی صحت کے حکم میں محدثین کا اجماع ہو۔
ہر وہ حدیث ضعیف ہے جس میں صحیح حدیث یا حسن حدیث کی صفات موجود نہ ہوں۔

یہ مضمون شائع ہوا: نور العینین فی مسئلۃ رفع الیدین صفحہ نمبر 60
حوالہ کے لئے دیکھیں: http://ishaatulhadith.com/books/pdf/Noor-ul-Enain-Rafa-ul-Yadain/#60

ishaatulhadith

جنت کے وارثین کون ہیں؟

مضمون: جنت کے وارثین کون ہیں؟ (صفحات: 1)
تحریر: حافظ زبیر علی زئی رحمہ اللہ
شائع ہوا: ماہنامہ اشاعۃ الحدیث شمارہ 96 صفحہ نمبر 49

ارشادِ باری تعالیٰ ہے: یہی لوگ وارث ہیں، جنھیں جنت الفردوس ملے گی، وہ اس میں ہمیشہ رہیں گے۔ (المؤمنون: 10-11)

ان آیات میں مومنین اور جنتی لوگوں کی درج ذیل نشانیاں بیان کی گئی ہیں:

  1. نمازوں کی حفاظت کرتے ہیں اور گناہوں سے دور رہتے ہیں۔
  2. ((خالدون)) کا مطلب ہے: وہ اس میں ہمیشہ ہمیشہ رہیں گے، انھیں اس سے نکالا نہیں جائے گا۔
  3. جنت کے درمیانی حصے کا نام ((جنت الفردوس)) ہے اور یہ جنت کا بلند ترین حصہ ہے۔ اسی سے جنت کی نہریں پھوٹتی ہیں اور اسی پر رحمٰن (اللہ تعالیٰ) کا عرش ہے۔

تمام حوالوں اور مکمل مضمون کے لئے چیک کریں: ماہنامہ الحدیث 96 صفحہ نمبر 49

قرآن مجید پر اعتراضات اور ان کی حقیقت

مضمون: قرآن مجید پر اعتراضات اور ان کی حقیقت (صفحات: 10)
تحریر: حافظ ندیم ظہیر حفظہ اللہ
شائع ہوا: ماہنامہ اشاعۃ الحدیث شمارہ 133 صفحہ نمبر 38
مکمل مضمون آن لائن پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں۔

ishaatulhadith.png
ماہنامہ اشاعۃ الحدیث کی مکمل لسٹ یہاں پر دیکھیں۔